شاعری

اب جدائی کے سفرآئیں گے

قیصر عباس

اب جدائی کے سفرآئیں گے
رات ٹوٹے گی تو گھر آئیں گے

جتنے آئیں گے ثمر ان کے ہیں
اپنے حصے میں شجر آئیں گے

صبح آئے گی، ا سے آنا ہے
پہلے راتوں کے کھنڈر آئیں گے

شب گزیدہ ہیں پریشان چہرے
موسمِ گل میں نکھر آئیں گے

سارے موسم ہیں ہمارے موسم
شاخ پر پھر سے ثمر آئیں گے

مشعلیں اپنی جلائے رکھنا
قافلے اور ادھر آئیں گے

بھیگی آنکھوں پہ سجانا قیصرؔ
راہ میں جتنے بھی سرآئیں گے

Qaisar Abbas

ڈاکٹر قیصرعباس روزنامہ جدوجہد کی مجلس ادارت کے رکن ہیں۔ وہ پنجاب یونیورسٹی  سے ایم اے صحافت کے بعد  پاکستان میں پی ٹی وی کے نیوزپروڈیوسر رہے۔ جنرل ضیا کے دور میں امریکہ آ ئے اور پی ایچ ڈی کی۔ کئی یونیورسٹیوں میں پروفیسر، اسسٹنٹ ڈین اور ڈائریکٹر کی حیثیت سے کام کرچکے ہیں۔ آج کل سدرن میتھوڈسٹ یونیورسٹی میں ایمبری ہیومن رائٹس پروگرام کے ایڈوائزر ہیں۔