خبریں/تبصرے

جارج فلوئڈ کی ہلاکت کے خلاف نیوزی لینڈ میں عوامی مظاہرے

لاہور (جدوجہد رپورٹ) پیر کے روز نیوزی لینڈ کے بعض شہروں اور قصبوں میں سیاہ فام امریکی شہری جارج فلوئڈ کی پولیس کے ہاتھوں ہلاکت کے خلاف عوامی مظاہرے ہوئے۔

ان مظاہروں میں ملک بھر سے ہزاروں لوگ شامل ہوئے۔ دارلحکومت ولینگڈن کے علاوہ کرائسٹ چرچ، جہاں مسجد میں حملے کے دوران 51 افراد ہلاک ہو گئے تھے، میں بھی مظاہرے ہوئے۔

آک لینڈ میں ہونے والا مظاہرہ امریکی قونصل خانے کے سامنے سے گزرا تو مظاہرین نے بلیک لائیوز میٹر کے نعرے لگائے۔ مختلف مظاہروں میں مسلم لائیوز میٹر اور انڈیجنس لائیوز میٹر کے نعرے بھی لگائے گئے۔

یاد رہے اس سے ایک روز قبل، اتوار کے دن لندن اور برلن میں بھی امریکی سیاہ فام شہری جارج فلوئڈ کی پولیس کے ہاتھوں ہلاکت کے خلاف مظاہرے ہوئے۔

لندن میں ہونے والا مظاہرہ ٹریفلگر اسکوائر سے شروع ہوا اور پارلیمنٹ کے سامنے سے گزرتا ہوا امریکی سفارت خانے کے سامنے جاکر ختم ہوا۔ مظاہرے میں سینکڑوں لوگوں نے شرکت کی۔ وہ ’نو جسٹس نو پیس‘ کے نعرے لگا رہے تھے۔

برلن میں بھی امریکی سفارت خانے کے باہر جارج فلوئڈ اور امریکہ کی سیاہ فام آبادی سے اظہارِ یکجہتی کے لئے مظاہرہ ہوا۔ مظاہرین جارج فلوئڈ کے ساتھ انصاف کرو، ہمیں کب تک جان سے مارو گے اور ہو از نیکسٹ؟ کے نعرے لگا رہے تھے۔