Roznama Jeddojehad


لطیف آفریدی مارکسسٹ اور بے آوازوں کی آواز تھے

میں ان کی سوچ اور جدوجہد سے واقفیت رکھتا ہوں کیونکہ ہم نے مل کر قانونی و سیاسی حکمت عملیاں تشکیل دیں، ایک غاصبانہ ریاست سے لڑے، افغانستان اور پشتون خطے میں سٹریٹیجک پالیسی کے خلاف نبرد آزما رہے، ملک میں لاپتہ افراد کی رہائی کے ئے مشترکہ کوششیں کیں، سابق فاٹاکے سیاسی حقوق کے لئے کتنی ہی رکاوٹوں کو اکٹھے عبور کیا، پختونخواہ میں دہشت گردی اور ریڈیکلائزیشن کے حوالے سے ریاست کی ناکام پالیسیوں کے خلاف مل کر آواز اٹھائی اور جمہوریت کے آدرش کی خاطر جدوجہد کی۔

عدم مساوات اور عالمی ٹیکس قوانین کے خلاف آج پاکستان سمیت دنیا بھر میں احتجاج ہو گا

آج جمعہ 20 جنوری کو اسلام آباد پریس کلب کے سامنے اڑھائی بجے، کراچی ابراہیم حیدری 3 بجے سہہ پہر، لاہور پریس کلب کے سامنے سہہ پہر 3 ںجے، فیصل آباد جھنگ روڈ 66 چک دھاندرہ نزد انٹر نیشنل ائیر پورٹ سہہ پہر 3 بجے، شکار پور پریس کلب کے سامنے 3 بجے سہہ پہر، تعلقہ دق کڑی پریس کلب لاڑکانہ سہہ پہر 3 بجے، قاسم روڈ بہاول پور، مردان پریس کلب کے سامنے 3 بجے سہہ پہر، کلیانوالہ پریس کلب ماموں کانجن کے سامنے سہہ پہر 3 بجے اور ٹوبہ ٹیک سنگھ میں پریس کلب کے سامنے دن 2 بجے احتجاجی مظاہرہ منعقد کیا جائے گا۔

سول ملٹری دراڑ کیوجہ سے 4 بار پاک بھارت امن ناکام ہوا

مقصد سرحد پار لوگوں کو خوش کرنا تھا کیونکہ اس میں مودی کی تعریفوں کے پل باندھے گئے ہیں۔ ادہر، جنرل باجوہ کے آئی ایس پی آر کی کوشش تھی کہ مودی کو ”گجرات کا قصاب“ بنا کر پیش کیا جائے۔ 2022ء میں بننے والی ویب سیریز ”سیوک: دی کنفیشنز“ ایک نجی ادارے نے بنائی۔ اسے آئی ایس پی آر کا تعاون بھی حاصل تھا۔ اس سیریز میں تاریخ اور سیاست کا احاطہ کیا گیا ہے۔ اداکار ہندوستان میں اقلیتوں پر ہونے والے مظالم کی بات کرتے دکھائی دیتے ہیں۔ ہندتوا پر تنقید کی گئی ہے۔ یہ وہی باتیں ہیں جو عمران خان کی حکومت کیا کرتی تھی۔ ذرائع کے مطابق جنرل باجوہ اپنی ریٹائرمنٹ سے پہلے اس سیریز کو ریلیز کرانا چاہتے تھے۔

چین: ایک مہینے میں کورونا سے 60 ہزار ہلاکتیں

اکتوبر میں شرو ع ہونے ولاے انفیکشن میں اضافے کے باوجود چین نے دسمبر میں اچانک اینٹی وائرس کنٹرول اٹھانے کے بعد کورونا کی اموات اور اعداد و شمار کی اطلاع دینا بند کر دیا اور ہسپتالوں کو بخار اور کھانسی کے مریضوں سے بھر دیا ہے۔

جموں کشمیر: آٹے کی قیمتوں میں یکمشت 1200 روپے اضافہ، عوام سراپا احتجاج

پاکستان کے زیر انتظام جموں کشمیر کے محکمہ خوراک نے سرکاری آٹے اور گندم کی قیمتوں میں یکمشت 35 فیصد کے قریب، یعنی فی 40 کلو گرام 1200 روپے کا اضافہ کر دیا ہے، جس کے بعد نئی قیمت 3670 روپے مقرر کر دی گئی ہے۔ پرائیویٹ آٹا مارکیٹ میں 6000 روپے فی 40 کلو گرام تک پہنچ گیا ہے۔