دن: نومبر 11، 2020

’بلوچستان کے صوبہ بننے سے مسئلے حل نہیں ہوئے تو گلگت بلتستان صوبہ بھی کسی مسئلے کا حل نہیں‘

نہ تو ہمارے قدم لڑکھڑائے ہیں، نہ ہمارے حوصلے کمزور ہوئے ہیں اور نہ ہی ہم جدوجہد کے سفرمیں تھکن محسوس کر رہے ہیں بلکہ ہم پہلے سے زیادہ مضبوط بنیادوں پر اپنی پارٹی کو مضبوط کرتے ہوئے، پارٹی کیڈرز کو نظریاتی اور سیاسی بنیادوں پر تیار کرتے ہوئے فیصلہ کن لڑائی کے لئے آگے بڑھیں گے اور حتمی فتح تک جدوجہد کا سفر جاری رکھیں گے۔

ایڈوکیٹ غفران احد ایک بار پھر بنیاد پرستوں کے حملے کی زد میں

اس موقع پر ان کے ساتھیوں اور ہمدوروں نے یہ بھی واضح کیا ہے کہ اگر ان پر گولی چلانے اور سنگین نوعیت کے فتوے جاری کرنے والے رجعتی عناصر کے خلاف قانونی کاروائی نہ کی گئی تو پورے ملک میں احتجاج کیا جائے گا اور حالات کی تمام تر ذمہ داری مقامی، صوبائی اور وفاقی حکومتوں پر عائد ہو گی۔