شاعری

فیض احمد فیضؔ کی نذر

قیصر عباس

20 نومبر 2020ء کو فیض احمد فیض کی 36 ویں برسی کی مناسبت سے

شہرِ سخن میں مہرِمنو ر کی بات ہو
اک شہ سوارِ کوچہِ دلبر کی بات ہو

اقلیمِ حرف اس کے قلم کی گرفت میں
خوشبو کی، پیرہن کی، ستم گر کی بات ہو

”پھر اوٹ لے کے دامنِ ابرِ بہارکی“
دورِجنوں کی، بادہ و ساغر کی بات ہو

بکھریں کتابِ دل پہ کئی خوشبوؤں کے باب
جب فیضؔ کی، قلم کی، سخنور کی بات ہو

دستِ صبا پہ نقش کرو نسخہ وفا
پھر جاکے اس نظر کے سمندر کی بات ہو

رکھو حصارِ ذہن میں قیصر ؔ تمام لفظ
بے فیض کیا غزل کی، گلِ تر کی بات ہو

Qaisar Abbas

ڈاکٹر قیصرعباس روزنامہ جدوجہد کی مجلس ادارت کے رکن ہیں۔ وہ پنجاب یونیورسٹی  سے ایم اے صحافت کے بعد  پاکستان میں پی ٹی وی کے نیوزپروڈیوسر رہے۔ جنرل ضیا کے دور میں امریکہ آ ئے اور پی ایچ ڈی کی۔ کئی یونیورسٹیوں میں پروفیسر، اسسٹنٹ ڈین اور ڈائریکٹر کی حیثیت سے کام کرچکے ہیں۔ آج کل سدرن میتھوڈسٹ یونیورسٹی میں ایمبری ہیومن رائٹس پروگرام کے ایڈوائزر ہیں۔