شاعری

میری اجرت، میرے ہاتھ!

قیصر عباس

کارخانوں کا دھواں
بند کر دو!
فیکٹری کے دروازے
مقفل کر دو!
قید کر دو مجھے
اندھے کنوؤں کے
پاتال میں
مگر سنو!
اپنے پالے ہوئے
لاٹھی بردار
غلاموں سے کہنا
میری محنت!
میری اجرت!
میرے ہاتھوں میں ہے
میرا کل
میرے خوابوں میں ہے
کیسے اسیر کرو گے اسے؟

Qaisar Abbas

ڈاکٹر قیصرعباس روزنامہ جدوجہد کی مجلس ادارت کے رکن ہیں۔ وہ پنجاب یونیورسٹی  سے ایم اے صحافت کے بعد  پاکستان میں پی ٹی وی کے نیوزپروڈیوسر رہے۔ جنرل ضیا کے دور میں امریکہ آ ئے اور پی ایچ ڈی کی۔ کئی یونیورسٹیوں میں پروفیسر، اسسٹنٹ ڈین اور ڈائریکٹر کی حیثیت سے کام کرچکے ہیں۔ آج کل سدرن میتھوڈسٹ یونیورسٹی میں ایمبری ہیومن رائٹس پروگرام کے ایڈوائزر ہیں۔