سائنس و ٹیکنالوجی

کامریڈ فقیر ڈرامہ نگار اور پروڈیوسر ہیں۔


پاپولر کلچر اور سائنس فکشن

سائنس محض یونیورسٹیوں میں پڑھانے سے فروغ نہیں پاتی بلکہ معاشرے کو سائنسی بنیادوں پہ استوار کرنے سے فروغ پاتی ہے جس میں پاپولر کلچرل ایک اہم رول ادا کرتا ہے۔ یہ افسوس کا مقام ہے کہ مسلم ممالک سے آج تک کوئی بڑی سائنس فکشن، ناول، ڈرامے اور فلم کی شکل میں سامنے نہیں آئی۔

بلیو وہیل گیم

یہ ہم پر منحصر ہے کہ ہم ٹیکنالوجی کو محفوظ انداز سے اور ذمہ داری کے ساتھ استعمال کریں اور اپنے بچوں کو بھی ایسا کرنے کا عادی بنائیں۔

پاکستان کے 81 پروفیسر دنیا کے ٹاپ 2 فیصد سائنسدان کیسے بنے؟ دھوکے بازی سے

خود نمائی اور سرکاری پالیسیوں نے، جن کی وجہ سے بد دیانتی کا کلچر فروغ پاتا ہے، پاکستان میں ہائر ایجوکیشن کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے۔ جب تک سخت اقدامات نہیں کئے جاتے، اس زوال پذیری کو روکنا ممکن نہیں۔ ہمیں اب اس کام کا آغاز کر دینا چاہئے۔

زمین نہیں مولوی صاحب کا ذہن ساکن ہے!

ممکن ہے یہ تجربہ کرتے ہوئے آپ کو بھی اسی طرح شرم آئے جس طرح مجھے یہ مضمون لکھتے ہوئے۔ اگر اکیسویں صدی کے دوسرے عشرے میں ہم زمین کے گول ہونے پر بحث کر رہے ہیں تو ہماری جگہ گھومتی ہوئی زمین کی پیٹھ پر نہیں، اس کے پیٹ میں ہونی چاہئے!

کرونا وائرس: گائے کا پیشاب یا وضو کا مشورہ دینے والے خود مہنگے ترین ہسپتال جائیں گے

ان مذہبی قوتوں کو اچھی طرح معلوم ہے کہ جس قدر توہمات عام ہوں گے، اس قدر ان کی سیاست آگے بڑھے گی۔ یہ سلسلہ پاکستان تک محدود نہیں۔ امریکہ ہو یا ہندوستان، مذہبی جنونی قوتیں اپنی سماجی اور سیاسی بنیاد کو وسیع کرنے کے لئے عوام دشمن، غیر منطقی اور غیر سائنسی نظریات آگے بڑھاتے ہیں۔

سائنس کی غیر سائنسی تعلیم

سائنس کی مخالفت صرف ہماری درسی کتب تک ہی محدود نہیں ہے۔ پاکستان میں سائنس اور ریاضی کے بہت سے اساتذہ اپنے پیشے سے ہی خوش نہیں ہیں۔