Umer Shahid

عمر شاہد پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین سے وابستہ ہیں اور مزدور تحریک میں سر گرم عمل ہیں۔


اوقات کار میں کمی کی جدوجہد اور مزدور تحریک کے فرائض

کارل مارکس نے سرمایہ دارانہ نظام کی حقیقت کو عیاں کرتے ہوئے واضح کیا تھا کہ سرمایہ دار کا حتمی مقصد شرح منافع میں اضافے کا حصول ہے اور اس شرح کا تعین پھر محنت اور سرمائے میں موجود مستقل کشمکش کرتی ہے۔ سرمایہ دارہر وقت اس کوشش میں رہتا ہے کہ اجرتیں گھٹا کر سب سے نچلی جسمانی سطح پر لائی جائیں اور کام کے گھنٹے بڑھا کر سب سے اوپر کی جسمانی سطح تک پہنچائے جائیں۔

کرونا وائرس وبا: سرمایہ داری کی تباہ کاریوں کے خلاف کیسے لڑا جائے؟

٭ تمام نجی ہسپتالوں، ٹیسٹ لیبارٹریزاور فارما سوٹیکل کمپنیوں کو فوری طور پر نیشنلائز کرتے ہوئے معیاری علاج فراہم کیا جائے۔
٭ کرونا وائرس کے ٹیسٹس اور اس کی روک تھام کے لئے تمام اشیا کی عوام تک مفت رسائی کو یقینی بنایا جائے۔
٭ صحت کے شعبے سے وابستہ افراد یعنی ڈاکٹرز، نرسزاور پیرامیڈیکل سٹاف کو حفاظتی کٹس فراہم کی جائیں نیز ان کے اوقات کار کو کم کر کے روزانہ 6 گھنٹے کیا جائے اور سٹاف کی کمی کے لئے فوری طور پر تمام میڈیکل ڈگری ہولڈز کو روزگار دیا جائے اور ان کی صلاحیتوں سے فائدہ اٹھایا جائے۔
٭ آئی ایم ایف اور دیگر عالمی مالیاتی اداروں کے قرضوں کی ادائیگی کو فوری طور پر روکتے ہوئے قرضوں کی ضبطگی کے لئے فوری طور پر اقدامات کئے جائیں۔