شاعری

سانحہ

عامر کریم

جب غریب پر گزرے
وہ بھی صنف نازک پر
کونپلوں سے بچوں کے
مخملی سے ذہنوں پر
ظلم و بربریت کے
انگنت، انمٹ
نقش چھوڑ جاتا ہے
سانحہ
جس کے آگے
ظلم و بربریت کے
درندگی، اذیت کے
معنی ہیچ لگتے ہیں
بچ گئی حیات کے
باقی ماندہ روز و شب
کس طرح سے کاٹیں گے
کونپلوں سے بچے
مخملی سے ذہنوں میں
گھر کیا ہوا وہ درد
کس کے ساتھ بانٹیں گے

عامر کریم کا تعلق پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپئین سے ہے۔