مزید پڑھیں...

مظاہرین پر بحریہ ٹاؤن کے گارڈز کی فائرنگ، شہری زخمی: کسانوں کی زبردست مزاحمت

سیاسی و سماجی رہنماؤں اور انسانی حقوق کے کارکنوں کی جانب سے سوشل میڈیا بالخصوص ٹویٹر پر بحریہ ٹاؤن انتظامیہ کی جانب سے کئے جانے والے آپریشن کی شدید مذمت کی جا رہی ہے اور ذمہ داران سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔

سری لنکا سماجی تصادم کے دہانے پر: کچھ سوالات، کچھ جوابات

عالمی تجزیوں کے مطابق جنوبی ایشیا انسانی حقوق کے پیمانوں پر دنیا میں بہت پیچھے ہے اور سری لنکا جیسے ملک میں بھی حالات کچھ مختلف نہیں ہیں۔ مبصرین کا خیال تو یہی تھا کہ اکثریتی بدھ مت اور اقلیتی تامل ہندو ؤں کے درمیان ایک لمبی خانہ جنگی سے، ملک سبق سیکھے گا اور تمام اقلیتوں سے بہتر سلوک کے لئے اقدامات کئے جائیں گے لیکن ابھی تک ایسا نہیں ہو سکا۔

بلوچستان میں گزشتہ سال 450 گمشدہ افراد بازیاب ہوئے، 1800 مزید لاپتہ: ایچ آر سی پی

گزشتہ سال کے دوران 116 سے زائد حادثات کوئلے کی کانوں میں رونما ہوئے، رپورٹ کے مطابق کانوں میں حادثات کی ایک بڑی تعداد رپورٹ ہی نہیں ہوتی۔ گزشتہ ایک سال کے دوران 116 حادثات میں سے صرف 5 حادثات قومی میڈیا میں رپورٹ ہوئے۔ گزشتہ ایک سال کے دوران کانوں میں حادثات کے نتیجے میں 58 مزدوروں کی ہلاکت ہوئی، جبکہ کم از کم 15 مزدور زخمی ہوئے۔

پاکستانی زیر انتظام جموں کشمیر: اعلیٰ عدالتیں غیر فعال، حکومت ججوں کی تقرری کیلئے آئینی ترمیم لانے میں ناکام

پاکستان کے زیر انتظام جموں کشمیر میں اعلیٰ عدالتیں مکمل طور پر غیر فعال ہو چکی ہیں اور مقامی حکومت اعلیٰ عدالتوں میں ججوں کی تقرری کیلئے دوسری آئینی ترمیم لانے میں ناکام ہو چکی ہے۔

ایچ آر سی پی نے 2021ء کی رپورٹ جاری کر دی: انسانی حقوق کی صورتحال مزید بدتر

کورونا وبا کے باعث لگنے والے لاک ڈاؤن کی وجہ سے پاکستا ن میں ہزاروں افراد کا روزگار ختم ہو گیا، سیاسی و جمہوری آزادیوں پر پابندیاں لگائی گئیں، صحافتی آزادیوں کو سلب کیا گیا، صحت اور انصاف کے بحران میں بھی اضافہ ہوا۔

جگمگاتے پیکیجز مال لاہور کا بھیانک چہرہ: سیکورٹی سٹاف کو آؤٹ سورس کرنیکا فیصلہ

ان سیٹھوں کی اس منافقت کا پردہ چاک کرنے کے لئے ضروری ہے کہ پیکیجز مال کے سیکورٹی عملے کے ارکان کے علاوہ ان تمام مزدوروں اور مازمین کے ساتھ بھی اظہار یکجہتی کیا جائے جو مزدور حقوق اور سرمایہ داری کی لوٹ مار کے خلاف بر سر پیکار ہیں۔

”میرا گھر دا سفر: لہندے پنجاب واپسی“: ایک تعارف

اسی کی دہائی میں ڈیرہ بابا نانک کی طرف شکار کھیلنے کے واقعات، پاکستان ٹیلی ویژن کی نشریات، دادا جی کے بھائی مہشندر سنگھ بوتالیہ کا 1970ء میں پاکستان آنا اور اپنے خاندان کے بارے میں مصنف کو تفصیلی معلومات سے آگاہ کرنا، لاہور کے مختلف علاقوں کا حال، گردوارہ ڈیرہ صاحب، لاہور ریلوے سٹیشن، لاہور کا عجائب گھر، ایچی سن کالج، سکھ دور کی شاندار حویلیاں اورانار کلی وغیرہ کا بیان، اس کتاب میں دلچسپ اور من کو موہ لینے والے انداز میں بیان ہوا ہے۔