Day: مئی 17، 2022

اکبر نوتزئی کوئٹہ میں رہتے ہیں اور روزنامہ ڈان سے منسلک ہیں۔


پیرکوہ: مُردوں کو غسل دینے کے لئے بھی پانی میسر نہیں رہا

ہیضے کی وبا اچھے حالات میں بھی انتہائی خطرناک ہوتی ہے، لیکن پانی کی شدید قلت اور مناسب صحت کی دیکھ بھال تک رسائی کی کمی کے ساتھ مل کر یہ تباہی کا نسخہ بن سکتی ہے۔ یہی کچھ بلوچستان کے وسیع و عریض ضلع ڈیرہ بگٹی کی تحصیل پیر کوہ میں ہو رہا ہے۔ آئل اینڈ گیس ڈویلپمنٹ کمپنی لمیٹڈ (اوجی ڈی سی ایل) کی ایک بڑی سہولت سمجھا جانے والا یہ دور دراز کا قصبہ پانی کی شدید قلت کے ساتھ وبا پھیلنے کی دوہری پریشانی کا سامنا کر رہا ہے۔

کابل: پاکستانی طالبان سے جنرل فیض حمید کی قیادت میں مذاکرات

حکومتی ذرائع کی جانب سے کہا جا رہا ہے کہ ایسے لوگ جو دہشت گردانہ سرگرمیوں میں ملوث نہیں تھے، ان کی واپسی دہشت گرد تنظیموں کے اندر مصالحت کرنے والے عناصر تک پہنچنے کیلئے دو جہتی حکمت عملی کا حصہ ہے اور پاکستان ٹی ٹی پی، اس کے ساتھیوں اور کٹر عناصر کو تنہا کرنا چاہتا ہے۔

مذہب اور سائنس

گفتگو کے اختتامی کلمات میں پرویز ہود بھائی نے اس بات کو ایک دفعہ پھر دہرایا کہ سائنس مادی کائنات سے تعلق رکھتی ہے اور یہاں پر سب کچھ طبیعات کے قوانین کے تحت وجود میں آیا ہے جبکہ مادی کائنات میں کچھ بھی ناقابل وضاحت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا: انسان کے پاس اتنی صلاحیت موجود ہے کہ وہ دنیا کو سمجھ سکے۔

ابو بکر سے ملاقات پر ایک پشتون بچے کا عمران خان کو خط

امید ہے آپ کی سوشل میڈیا ٹیم یہ خط آپ تک پہنچا دے گی۔ میں نہیں چاہتا کہ میرا خط وائرل ہو مگر یہ ضرور چاہتا ہوں کہ آپ ان سارے سکھ بچوں سے ضرور ملیں جن کے والدین ٹارگٹ کلنگ میں مارے گئے اور ان سارے بچوں کی قمیضوں پر آٹو گراف دیں جن کی ٹانگیں طالبان کی لگائی لینڈ مائنز میں ضائع ہو گئیں۔ جس محبت سے آپ ابو بکر سے ملے اس کی وجہ سے مجھے پورا یقین ہے آپ میری بات ضرور مانیں گے۔

علی وزیر کو جیل میں رکھنے کے ریاستی ہتھکنڈے

محسن داوڑ کے مطابق علی وزیر کو جونہی موجودہ مقدمات میں ضمانتیں ملنا شروع ہوئیں، تو بوٹ بیسن پولیس تھانہ میں مئی 2018ء میں سربمہر (سیل) کی گئی ایک من گھڑت ایف آئی آر علی وزیر کو مزید عرصہ تک جیل میں رکھنے کیلئے ظاہر کی گئی ہے۔

یکساں قومی نصاب: ڈاکٹر عبدالسلام کا ذکر اقلیتوں میں بھی نہ ہو سکا

ڈاکٹر عبدالسلام کی قبر پر لگی ان کے نام کی تختی توڑنے سمیت پاکستان کی کچھ جامعات میں ان کے نام سے منسوب شعبہ جات کے نام تبدیل کئے جانے سمیت متعدد ایسے اقدامات ماضی میں بھی کئے گئے ہیں، جن کے ذریعے سے ڈاکٹر عبدالسلام کے نام اور کردار کو ان کی مذہبی شناخت کی وجہ سے مٹانے کی سازش ظاہر ہوتی ہو۔